جوؤں سے نجات حاصل کرنے کے ٹوٹکے

  Click to listen highlighted text! تحریر: سائرہ شاہد سر کی جوئیں خواتین کا ایک عام اور اہم مسئلہ ہے ۔ خاص طور سے اسکول جانے والے بچوں کی مائیں اس کو لے کر کافی پریشان رہتی ہیں ۔ اسکول میں جوئیں بچوں کے سروں میں ایک دوسرے سے منتقل ہو جاتی ہیں ۔ اگر جوئیں گھر کے کسی ایک فرد کے سر میں پڑ جائیں تو پورے گھر کی شامت آجاتی ہے۔لمبے بالوں میں جوئیں پڑنا کوئی غیر معمولی بات نہیں۔جوؤں کا تعلق کیڑوں کے اس قبیلہ سے ہے جو اپنی روزی خود نہیں کماتے ۔محنت مشقت سے جی چرانے والے ان کیڑوں کی متعدد قسمیں ہیں یہ اپنے لئے کوئی شکار تلاش کرکے ساری زندگی انھی کے خون کو چوستے چوستے گزار دیتی ہیں۔یہ کیڑے ہر جگہ مختلف نوعیت اور اشکال کے ہوتے ہیں۔ جس طرح مادہ مچھر لوگوں کا خون پی کر توانائی حاصل کرتی ہیں اور اپنے بچے بھی اپنے شکار کے جسم میں داخل کرکے انکے رزق کا بھی بندوبست کردیتی ہے ، پیٹ اور متعدی خارش کے کیڑے اور سر کی جوئیں بھی یہ ہی روش اپناتی ہیں جوئیں ہو جانے کی بڑی وجہ گردوغبار اور مٹی ہوتی ہے جو بالوں کی جڑوں میں جمی رہ جاتی ہے ۔ اگر بالو ں کی صفائی کا مناسب خیال نہ رکھاجائے تو یہ جوؤں کی افزائش کے لئے سازگار ماحول فراہم کرتی ہے۔سر میں جوئیں پڑنے کے بعد خارش ، سرمیں چھوٹے چھوٹے دانے ، شریٰ اور جلد کا رنگ اڑجاتاہے ۔جلد موٹی ہوجاتی ہے ، خارش اور جلن کی وجہ سے باربار کھجانے کے نتیجے میں جلد میں آنے والی خراشوں میں سوزش،ایگزیما اور پھنسیاں وغیرہ نکل سکتی ہیں۔بڑی جوؤں کے منہ میں ایک کیمیائی عنصر ہوتاہے۔ جب یہ خون پینے لگتی ہے تو اس وقت کیمیائی عنصر کا انجیکشن لگادیتی ہیں جس سے خون پتلا ہوجاتا ہے اور اسطرح و ہ اپنی خواہش کے مطابق خون پی سکتی ہے ۔خود کو اور اپنے بچوں کو جوؤں سے نجات دلانے کے لئے درج ذیل طریقوں پر عمل کرکے اپنی زندگی کو محفوظ بنائیں۔ جوؤں سے نجات کے طریقے ۱۔بالوں میں کنگھی یابرش محض اسلئے نہیں کیا جاتا کہ آپ اپنے بالوں کو سنوار سکیں بلکہ اسکے ذریعہ سر کا مساج بھی ہو جاتاہے اور ان پر جمی ہوئی مٹی اور گردوغبار بھی نکل جاتاہے۔ لہٰذا جوؤں سے نجات حاصل کرنے کے لئے پہلے آپ اپنے بالوں میں بکثرت کنگھی یا برش کریں اور بالخصوص رات سونے سے قبل ضرور کنگھی کیاکریں۔ ۲۔اپنا کنگھا، برش اور تولیہ الگ رکھیں۔ تکیہ کے غلاف اور پلنگ کی چادر کو تبدیل کرنے کے لئے پوری طرح سے میلا ہونے کا انتظار نہ کریں۔ بلکہ اپنی سہولت کے مطابق تھوڑے دنوں بعد سب چیزیں دھو لیا کریں۔ ۳۔مایونیز، زیتون کا تیل اور پٹرولیم جیلی ہم وزن ملا کر جڑوں پر لگائیں اور آدھے گھنٹے بعد دھو لیں۔جوؤں کے ساتھ ساتھ جوؤں سے ہونے والی خارش اور بے چینی سے بھی نجات مل جائے گی۔ ۴۔تلسی کے پتے دھو کر پیس کر سر پر لگائیں اور شاور کیپ پہن لیں۔جب سوکھ جائے تو تھوڑے پتے ابال کر اس پانی سے سر دھوئیں اور پانی ڈالتے ہوئے کنگھی کرتے جائیں۔شیمپو کے بعد تھوڑے سے زیتون کے تیل میں دوقطرے لیمبو کا عرق ملاکر گیلے بالوں میں ہی لگالیں اور تولیہ لپیٹ لیں۔ صرف دو سے تین دفعہ کے استعما ل سے ہی آپکو جوؤں سے نجات مل جائے گی۔ ۵۔ٹی ٹری آئل ،تارا میرا اور لونگ کا تیل بھی جوؤں کے خاتمے میں مفید ہے ۔البتہ جو بھی تیل استعمال کریں اسے پہلے تھوڑی جگہ لگاکر چیک کریں کہ کہیں آپکو اس سے الرجی تو نہیں ہو رہی۔ ۶۔روزمیری اور لیونڈر آئل میں چند قطرے لیمبو کا عرق ملا کر سر پر لگائیں اور تیس منٹ بعد دھو لیں ۔ پھرجوؤں والی کنگھی بالوں میں پھیریں۔ ۷۔مرمکی اور لوبان (۱۵ ، پندرہ گرام )اورحب الرشاد( بیس گرام) کو پانچ سو گرام سرکہ میں پانچ منٹ تک ہلکی آنچ پر ابال لیں پھر چھان کر جو آمیزہ تیار ہو اسے سر پہ لگائیں ۔تمام جوئیں مر جائیں گی انمیں سے کوئی دوا بھی زہریلی نہیں اور مرمکی چونکہ دافع تعفن ہے تو اسکے استعمال سے سر میں موجود باقی جراثیم بھی ہلاک ہوجائیں گے ۔ ۸۔ذریرہ(باچھ) کو پانی میں ابال کر اسکے جوشاندہ کو سر میں تھوڑی دیر کے لیے لگائیں تو جوئیں مر جاتی ہیں ۔اس کی جڑوں کو سرکہ میں ابال کر لگائیں تو وہ پانی والے جوشاندہ سے زیادہ مفید ہے۔ جوؤں کے خاتمہ کے لئے خالی سرکہ بھی آپ استعمال کر سکتے ہیں۔ ۹۔عہدِرسالت میں خوشبو کے لئے لوبان ، عودالہندی،اور ذریرہ استعمال ہوتے تھے ، انمیں سے ہر دوائی خوشبو دار ہونے کے علاوہ جوؤں کے لئے بھی مفید ہے ۔جوئیں خوشبو سے مرجاتی ہیں ۔کیمیکل والی ادویات کے استعمال سے پر ہیز کریں وہ جوئیں تو ختم کردیں گی لیکن آپکے بالوں کے لئے نقصان دہ ہیں۔ ۱۰۔پسی کالی مرچ میں تیل ملا کر سر پر مساج کریں۔مساج کے پندرہ منٹ بعد کنگھی کریں۔

تحریر: سائرہ شاہد

سر کی جوئیں خواتین کا ایک عام اور اہم مسئلہ ہے ۔ خاص طور سے اسکول جانے والے بچوں کی مائیں اس کو لے کر کافی پریشان رہتی ہیں ۔ اسکول میں جوئیں بچوں کے سروں میں ایک دوسرے سے منتقل ہو جاتی ہیں ۔ اگر جوئیں گھر کے کسی ایک فرد کے سر میں پڑ جائیں تو پورے گھر کی شامت آجاتی ہے۔لمبے بالوں میں جوئیں پڑنا کوئی غیر معمولی بات نہیں۔جوؤں کا تعلق کیڑوں کے اس قبیلہ سے ہے جو اپنی روزی خود نہیں کماتے ۔محنت مشقت سے جی چرانے والے ان کیڑوں کی متعدد قسمیں ہیں یہ اپنے لئے کوئی شکار تلاش کرکے ساری زندگی انھی کے خون کو چوستے چوستے گزار دیتی ہیں۔یہ کیڑے ہر جگہ مختلف نوعیت اور اشکال کے ہوتے ہیں۔ جس طرح مادہ مچھر لوگوں کا خون پی کر توانائی حاصل کرتی ہیں اور اپنے بچے بھی اپنے شکار کے جسم میں داخل کرکے انکے رزق کا بھی بندوبست کردیتی ہے ، پیٹ اور متعدی خارش کے کیڑے اور سر کی جوئیں بھی یہ ہی روش اپناتی ہیں

جوئیں ہو جانے کی بڑی وجہ گردوغبار اور مٹی ہوتی ہے جو بالوں کی جڑوں میں جمی رہ جاتی ہے ۔ اگر بالو ں کی صفائی کا مناسب خیال نہ رکھاجائے تو یہ جوؤں کی افزائش کے لئے سازگار ماحول فراہم کرتی ہے۔سر میں جوئیں پڑنے کے بعد خارش ، سرمیں چھوٹے چھوٹے دانے ، شریٰ اور جلد کا رنگ اڑجاتاہے ۔جلد موٹی ہوجاتی ہے ، خارش اور جلن کی وجہ سے باربار کھجانے کے نتیجے میں جلد میں آنے والی خراشوں میں سوزش،ایگزیما اور پھنسیاں وغیرہ نکل سکتی ہیں۔بڑی جوؤں کے منہ میں ایک کیمیائی عنصر ہوتاہے۔ جب یہ خون پینے لگتی ہے تو اس وقت کیمیائی عنصر کا انجیکشن لگادیتی ہیں جس سے خون پتلا ہوجاتا ہے اور اسطرح و ہ اپنی خواہش کے مطابق خون پی سکتی ہے ۔خود کو اور اپنے بچوں کو جوؤں سے نجات دلانے کے لئے درج ذیل طریقوں پر عمل کرکے اپنی زندگی کو محفوظ بنائیں۔

جوؤں سے نجات کے طریقے
۱۔بالوں میں کنگھی یابرش محض اسلئے نہیں کیا جاتا کہ آپ اپنے بالوں کو سنوار سکیں بلکہ اسکے ذریعہ سر کا مساج بھی ہو جاتاہے اور ان پر جمی ہوئی مٹی اور گردوغبار بھی نکل جاتاہے۔ لہٰذا جوؤں سے نجات حاصل کرنے کے لئے پہلے آپ اپنے بالوں میں بکثرت کنگھی یا برش کریں اور بالخصوص رات سونے سے قبل ضرور کنگھی کیاکریں۔
۲۔اپنا کنگھا، برش اور تولیہ الگ رکھیں۔ تکیہ کے غلاف اور پلنگ کی چادر کو تبدیل کرنے کے لئے پوری طرح سے میلا ہونے کا انتظار نہ کریں۔ بلکہ اپنی سہولت کے مطابق تھوڑے دنوں بعد سب چیزیں دھو لیا کریں۔
۳۔مایونیز، زیتون کا تیل اور پٹرولیم جیلی ہم وزن ملا کر جڑوں پر لگائیں اور آدھے گھنٹے بعد دھو لیں۔جوؤں کے ساتھ ساتھ جوؤں سے ہونے والی خارش اور بے چینی سے بھی نجات مل جائے گی۔
۴۔تلسی کے پتے دھو کر پیس کر سر پر لگائیں اور شاور کیپ پہن لیں۔جب سوکھ جائے تو تھوڑے پتے ابال کر اس پانی سے سر دھوئیں اور پانی ڈالتے ہوئے کنگھی کرتے جائیں۔شیمپو کے بعد تھوڑے سے زیتون کے تیل میں دوقطرے لیمبو کا عرق ملاکر گیلے بالوں میں ہی لگالیں اور تولیہ لپیٹ لیں۔ صرف دو سے تین دفعہ کے استعما ل سے ہی آپکو جوؤں سے نجات مل جائے گی۔
۵۔ٹی ٹری آئل ،تارا میرا اور لونگ کا تیل بھی جوؤں کے خاتمے میں مفید ہے ۔البتہ جو بھی تیل استعمال کریں اسے پہلے تھوڑی جگہ لگاکر چیک کریں کہ کہیں آپکو اس سے الرجی تو نہیں ہو رہی۔
۶۔روزمیری اور لیونڈر آئل میں چند قطرے لیمبو کا عرق ملا کر سر پر لگائیں اور تیس منٹ بعد دھو لیں ۔ پھرجوؤں والی کنگھی بالوں میں پھیریں۔
۷۔مرمکی اور لوبان (۱۵ ، پندرہ گرام )اورحب الرشاد( بیس گرام) کو پانچ سو گرام سرکہ میں پانچ منٹ تک ہلکی آنچ پر ابال لیں پھر چھان کر جو آمیزہ تیار ہو اسے سر پہ لگائیں ۔تمام جوئیں مر جائیں گی انمیں سے کوئی دوا بھی زہریلی نہیں اور مرمکی چونکہ دافع تعفن ہے تو اسکے استعمال سے سر میں موجود باقی جراثیم بھی ہلاک ہوجائیں گے ۔
۸۔ذریرہ(باچھ) کو پانی میں ابال کر اسکے جوشاندہ کو سر میں تھوڑی دیر کے لیے لگائیں تو جوئیں مر جاتی ہیں ۔اس کی جڑوں کو سرکہ میں ابال کر لگائیں تو وہ پانی والے جوشاندہ سے زیادہ مفید ہے۔ جوؤں کے خاتمہ کے لئے خالی سرکہ بھی آپ استعمال کر سکتے ہیں۔
۹۔عہدِرسالت میں خوشبو کے لئے لوبان ، عودالہندی،اور ذریرہ استعمال ہوتے تھے ، انمیں سے ہر دوائی خوشبو دار ہونے کے علاوہ جوؤں کے لئے بھی مفید ہے ۔جوئیں خوشبو سے مرجاتی ہیں ۔کیمیکل والی ادویات کے استعمال سے پر ہیز کریں وہ جوئیں تو ختم کردیں گی لیکن آپکے بالوں کے لئے نقصان دہ ہیں۔
۱۰۔پسی کالی مرچ میں تیل ملا کر سر پر مساج کریں۔مساج کے پندرہ منٹ بعد کنگھی کریں۔