عوامی حقوق پر کوئی سمجھوتہ ہوگا نہ کسی قربانی سے دریغ کریں گے ، علامہ ساجد نقوی

  Click to listen highlighted text! لاہور : شیعہ علما کونسل پاکستان کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے واضح کیا ہے کہ عوامی حقوق کے حصول پر کوئی سمجھوتہ ہوگا نہ ہی آئینی اور شہری حقوق کے حصول میں کسی قربانی سے دریغ کریں گے،سیاسی و عملی جدوجہدجاری رکھیں گے ، 73 کے دستور میں 40 کے قریب آرٹیکلز عوامی حقوق کی ضمانت دیتے ہیں جب تک ملک میں آئین کی بالادستی، قانون کی حکمرانی اور عوام کی قدردانی نہیں ہوگی ملک ترقی نہیں کرسکتا۔ پڑوسی ملک میں کسانوں کی تحریک عوامی حقوق کے حصول کےلئے سنگین مشکلات کے باوجود اتحاد کے ساتھ اس تحریک نے ایوان اقتدار کو ہلاکر رکھ دیا ، حکومت کو ظالمانہ اقدامات کو واپس لینے پرمجبور کردیا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاکہ وہ قومیں ، معاشرے یا ریاستیں موجودہ ترقیاتی یافتہ دور میں آگے بڑھتی ہیں جنہیں آزادانہ ماحول ، جمہوری ، آئینی و بنیادی حقوق کی فراہمی میں کسی قسم کی رکاوٹ کا سامنا نہ ہو ۔ ہم عرصہ سے متوجہ کرتے آئے ہیں کہ جب تک آئین کی بالا دستی، قانون کی حکمرانی، بنیادی انسانی حقوق اور آئین میں فراہم کی گئی شخصی آزادی کا تحفظ یقینی نہیں بنایا جاتا ترقی یافتہ اور مہذب معاشرے کی تشکیل ناممکن ہے۔ مگر ایک طرف نا انصافی دوسری طرف شہری آزادیوں کو سلب کرنے کاتسلسل ہے ، ان حالات میں قوم آمادہ رہے عوامی حقوق کے حصول کےلئے لائحہ عمل کا اعلان کیا جاسکتا ہے ۔

لاہور : شیعہ علما کونسل پاکستان کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے واضح کیا ہے کہ عوامی حقوق کے حصول پر کوئی سمجھوتہ ہوگا نہ ہی آئینی اور شہری حقوق کے حصول میں کسی قربانی سے دریغ کریں گے،سیاسی و عملی جدوجہدجاری رکھیں گے ، 73 کے دستور میں 40 کے قریب آرٹیکلز عوامی حقوق کی ضمانت دیتے ہیں جب تک ملک میں آئین کی بالادستی، قانون کی حکمرانی اور عوام کی قدردانی نہیں ہوگی ملک ترقی نہیں کرسکتا۔ پڑوسی ملک میں کسانوں کی تحریک عوامی حقوق کے حصول کےلئے سنگین مشکلات کے باوجود اتحاد کے ساتھ اس تحریک نے ایوان اقتدار کو ہلاکر رکھ دیا ، حکومت کو ظالمانہ اقدامات کو واپس لینے پرمجبور کردیا۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہاکہ وہ قومیں ، معاشرے یا ریاستیں موجودہ ترقیاتی یافتہ دور میں آگے بڑھتی ہیں جنہیں آزادانہ ماحول ، جمہوری ، آئینی و بنیادی حقوق کی فراہمی میں کسی قسم کی رکاوٹ کا سامنا نہ ہو ۔ ہم عرصہ سے متوجہ کرتے آئے ہیں کہ جب تک آئین کی بالا دستی، قانون کی حکمرانی، بنیادی انسانی حقوق اور آئین میں فراہم کی گئی شخصی آزادی کا تحفظ یقینی نہیں بنایا جاتا ترقی یافتہ اور مہذب معاشرے کی تشکیل ناممکن ہے۔ مگر ایک طرف نا انصافی دوسری طرف شہری آزادیوں کو سلب کرنے کاتسلسل ہے ، ان حالات میں قوم آمادہ رہے عوامی حقوق کے حصول کےلئے لائحہ عمل کا اعلان کیا جاسکتا ہے ۔