عراق میں سیاسی تعطل دور کرنے کیلئے قومی مکالمے کا آغاز، مقتدیٰ الصدر کا بائیکاٹ

بغداد : عراق میں سیاسی تعطل دور کرنے کیلئے قومی مکالمے کا آغاز ہوگیا۔ وزیر اعظم مصطفیٰ الکاظمی کی زیرصدارت اجلاس میں مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنما، صدر برہم صالح، قانون ساز اداروں اور عدلیہ کے سربراہان اور عراق کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندے شریک ہیں۔ کردستان ڈیموکریٹک پارٹی کے نمائندے کے طور پر اجلاس میں شریک وزیر خارجہ فواد حسین جنہوں نے کہا کہ اجلاس میں کوئی فیصلہ نہیں کیا جائے گا اور اس میں صرف سیاسی بحران کے حل کے لیے پیش کیے جانے والے اقدامات پر بات کی جائے گی۔
ادھر مقتدیٰ الصدر نے وزیر اعظم مصطفیٰ الکاظمی کی طرف سے بلائے گئے مذاکرات کا بائیکاٹ کیا ہے اور ان کا کوئی نمائندہ شریک نہیں۔

  Click to listen highlighted text! بغداد : عراق میں سیاسی تعطل دور کرنے کیلئے قومی مکالمے کا آغاز ہوگیا۔ وزیر اعظم مصطفیٰ الکاظمی کی زیرصدارت اجلاس میں مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنما، صدر برہم صالح، قانون ساز اداروں اور عدلیہ کے سربراہان اور عراق کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندے شریک ہیں۔ کردستان ڈیموکریٹک پارٹی کے نمائندے کے طور پر اجلاس میں شریک وزیر خارجہ فواد حسین جنہوں نے کہا کہ اجلاس میں کوئی فیصلہ نہیں کیا جائے گا اور اس میں صرف سیاسی بحران کے حل کے لیے پیش کیے جانے والے اقدامات پر بات کی جائے گی۔ ادھر مقتدیٰ الصدر نے وزیر اعظم مصطفیٰ الکاظمی کی طرف سے بلائے گئے مذاکرات کا بائیکاٹ کیا ہے اور ان کا کوئی نمائندہ شریک نہیں۔