ایرانی صدر نے جنرل اسمبلی میں شہید قاسم سلیمانی کی تصویر لہرادی، امریکا اور اسرائیل پر کھل کر تنقید کی

نیویارک : ایرانی صدر آیت اللہ ابراہیم رئسیی نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب میں امریکا اور صیہونی حکومت پر کھل کر تنقید کی اور اپنے خطاب کے دوران شہید قاسم سلیمانی کی تصویر بھی لہرادی۔ انہوں نے سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف مقدمہ چلانے کا مطالبہ کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ ایران ملک کے اعلیٰ کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کی پیروی کرے گا۔ قاسم سلیمانی کی تصویر لہرانے پر اسرٹ وفد بھاگ کھڑا ہوا۔ ایرانی صدر نے امریکا کی تخیلق کی گئی دہشت گردی اور مداخلت پسندانہ پالیسیوں کا مقابلہ کرنے میں ایران کے نمایاں اور ترقی پسند کردار کی تعریف کی۔ آیت اللہ ابراہیم رئیسی نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف اس جنگ کا کمانڈر اور ہیرو، اور داعش کو تباہ کرنے والا کوئی اور نہیں شہید قاسم سلیمانی تھا۔ وہ شخص، جو خطے کی قوموں کی آزادی کی راہ میں شہید ہوا۔ صدر رئیسی نے مزید کہا کہ ٹرمپ نے جس ظلم کے ارتکاب کا اعتراف کیا ہے اس کے خلاف قانونی چارہ جوئی کرنا انسانیت کی خدمت کے مترادف ہے۔

  Click to listen highlighted text! نیویارک : ایرانی صدر آیت اللہ ابراہیم رئسیی نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب میں امریکا اور صیہونی حکومت پر کھل کر تنقید کی اور اپنے خطاب کے دوران شہید قاسم سلیمانی کی تصویر بھی لہرادی۔ انہوں نے سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف مقدمہ چلانے کا مطالبہ کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ ایران ملک کے اعلیٰ کمانڈر جنرل قاسم سلیمانی کے قتل کی پیروی کرے گا۔ قاسم سلیمانی کی تصویر لہرانے پر اسرٹ وفد بھاگ کھڑا ہوا۔ ایرانی صدر نے امریکا کی تخیلق کی گئی دہشت گردی اور مداخلت پسندانہ پالیسیوں کا مقابلہ کرنے میں ایران کے نمایاں اور ترقی پسند کردار کی تعریف کی۔ آیت اللہ ابراہیم رئیسی نے کہا کہ دہشت گردی کے خلاف اس جنگ کا کمانڈر اور ہیرو، اور داعش کو تباہ کرنے والا کوئی اور نہیں شہید قاسم سلیمانی تھا۔ وہ شخص، جو خطے کی قوموں کی آزادی کی راہ میں شہید ہوا۔ صدر رئیسی نے مزید کہا کہ ٹرمپ نے جس ظلم کے ارتکاب کا اعتراف کیا ہے اس کے خلاف قانونی چارہ جوئی کرنا انسانیت کی خدمت کے مترادف ہے۔