یورپی یونین نے افغانستان کیلئے امدادی پیکج ایک ارب یورو تک بڑھادیا

  Click to listen highlighted text! برسلز: یورپی یونین نے افغانستان اور اس کے پڑوسی ممالک کا امدادی پیکج ایک ارب یورو تک بڑھا دیا، یورپی یونین افغان امدادی پیکج کے لیے مزید 70 کروڑ یورو جاری کرے گا، یورپی یونین اس سے پہلے افغانستان کے لیے 30 کروڑ یورو امداد کا اعلان کر چکا ہے۔ یورپی امداد انسانی، سماجی و معاشی ضروریات پرخرچ ہوگی جبکہ یورپی امداد کا کچھ حصہ افغان شہریوں کو پناہ دینے والے پڑوسی ممالک کو دیا جائے گا۔ صدر یورپی یونین ارسلا وان کا کہتی ہیں افغانستان کو انسانی، سماجی و معاشی تباہی سے بچانے کے لیے ہر ممکن کوشش کرنی ہوگی، طویل مدتی امداد کے لیے طالبان کو یورپی یونین کی5 شرائط کو پورا کرنا ہوگا۔شرائط کے مطابق طالبان کو انسانی حقوق اور خواتین کے حقوق کا احترام کرنا ہوگا، طالبان افغانستان کو دوبارہ دہشت گردوں کی پناہ گاہ نہیں بننے دیں گے۔افغانستان میں میڈیا کی آزادی اور افغان حکومت میں تمام گروپوں کی سیاسی نمائندگی ہوگی اور طالبان انسانی امداد کے لیے امدادی اداروں کو مکمل رسائی فراہم کریں گے۔

برسلز: یورپی یونین نے افغانستان اور اس کے پڑوسی ممالک کا امدادی پیکج ایک ارب یورو تک بڑھا دیا، یورپی یونین افغان امدادی پیکج کے لیے مزید 70 کروڑ یورو جاری کرے گا، یورپی یونین اس سے پہلے افغانستان کے لیے 30 کروڑ یورو امداد کا اعلان کر چکا ہے۔ یورپی امداد انسانی، سماجی و معاشی ضروریات پرخرچ ہوگی جبکہ یورپی امداد کا کچھ حصہ افغان شہریوں کو پناہ دینے والے پڑوسی ممالک کو دیا جائے گا۔ صدر یورپی یونین ارسلا وان کا کہتی ہیں افغانستان کو انسانی، سماجی و معاشی تباہی سے بچانے کے لیے ہر ممکن کوشش کرنی ہوگی، طویل مدتی امداد کے لیے طالبان کو یورپی یونین کی5 شرائط کو پورا کرنا ہوگا۔شرائط کے مطابق طالبان کو انسانی حقوق اور خواتین کے حقوق کا احترام کرنا ہوگا، طالبان افغانستان کو دوبارہ دہشت گردوں کی پناہ گاہ نہیں بننے دیں گے۔افغانستان میں میڈیا کی آزادی اور افغان حکومت میں تمام گروپوں کی سیاسی نمائندگی ہوگی اور طالبان انسانی امداد کے لیے امدادی اداروں کو مکمل رسائی فراہم کریں گے۔