امیر ممالک کا شرمناک اقدام، معیاد ختم ہونے لگی تو ویکسین غریب ممالک کو عطیہ کرنا شروع کردی

  Click to listen highlighted text! برسلز : امیر ممالک نے پہلے تو ویکسین کی لاکھوں اضافی ڈوسز کا ذخیرہ کرلیا اور غریب ممالک محروم رہے جب ان ویکسین کی معیاد ختم ہونے لگی تو انہیں غریب ممالک کو عطیہ کرنا شروع کردیا تاہم پسماندہ ممالک نے10 کروڑ سے زائد بے کار ویکسین لینے سے انکار کردیا۔ جنوبی سوڈان، کانگو اور نمیبیا سمیت کئی ممالک نے ویکسین کی کھیپ واپس کردی جبکہ نائیجیریا نے ایک کروڑ ویکسین ضائع کردیں۔ عالمی ادارہ صحت نے امیر ممالک کی جانب سے پسماندہ ممالک کو زائد المعیاد ویکسین بھیجنے کے اقدام کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے۔ جنوری کے اعدادوشمار کے مطابق امیر ممالک کی 67 فیصد آبادی کو ویکسین لگ چکی ہے جبکہ پسماندہ ممالک میں یہ تعداد صرف4 فیصد ہے۔

برسلز : امیر ممالک نے پہلے تو ویکسین کی لاکھوں اضافی ڈوسز کا ذخیرہ کرلیا اور غریب ممالک محروم رہے جب ان ویکسین کی معیاد ختم ہونے لگی تو انہیں غریب ممالک کو عطیہ کرنا شروع کردیا تاہم پسماندہ ممالک نے10 کروڑ سے زائد بے کار ویکسین لینے سے انکار کردیا۔ جنوبی سوڈان، کانگو اور نمیبیا سمیت کئی ممالک نے ویکسین کی کھیپ واپس کردی جبکہ نائیجیریا نے ایک کروڑ ویکسین ضائع کردیں۔ عالمی ادارہ صحت نے امیر ممالک کی جانب سے پسماندہ ممالک کو زائد المعیاد ویکسین بھیجنے کے اقدام کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی ہے۔ جنوری کے اعدادوشمار کے مطابق امیر ممالک کی 67 فیصد آبادی کو ویکسین لگ چکی ہے جبکہ پسماندہ ممالک میں یہ تعداد صرف4 فیصد ہے۔