روس کی قیادت میں قازقستان سے امن فوج کا انخلاء شروع

  Click to listen highlighted text! الماتی : روس کی قیادت میں دو ہزار سے زائد فوجیوں نے قازقستان سے انخلا کا عمل شروع کر دیا ہے۔ روسی جنرل اور اجتماعی سیکیورٹی کی تنظیم کے فوجی دستوں کے کمانڈر آنڈرے سردوکوف نے کہا کہ امن آپریشن اپنے اختتام کو پہنچ گیا ہے اور اس کے ذمے کام مکمل ہو گئےقازقستان میں پر تشدد احتجاج کے دوران روسی قیادت میں فوجیں تعینات کی گئی تھیں۔ قازقستان کے صدر قاسم جومارت نے کہا کہ روس اور اتحادی فوجوں نے ملک میں صورتحال کو مستحکم کرنے میں انتہائی اہم کرداد ادا کیا ہے۔الماتی میں سی ایس ٹی او کے مشن کی اختتامی تقریب منعقد ہوئی جس میں تمام چھ رکن ممالک کے قومی ترانے نشر کیے گئے اور سرکاری عہدیداروں کی جانب سےتقاریر کی گئیں۔سی ایس ٹو او کے کمانڈر آنڈرے سردوکوف کی قیادت میں روس، بیلاروس، آرمینیا، تاجکستان اور کرغستان سے آنے والی فوجیں 6 جنوری کو قازقستان میں تعینات کی گئی تھیں۔روسی وزارت دفاع نے تصدیق کی کہ امن فوج نے روسی ایرو سپیس فورسز کے ملٹری ایوی ایشن کے جہازوں میں اپنا ساز و سامان لوڈ کرنے کی تیاری شروع کر دی ہے اور مستقل تعیناتی کے مقام پر واپس لوٹ رہی ہیں۔

الماتی : روس کی قیادت میں دو ہزار سے زائد فوجیوں نے قازقستان سے انخلا کا عمل شروع کر دیا ہے۔ روسی جنرل اور اجتماعی سیکیورٹی کی تنظیم کے فوجی دستوں کے کمانڈر آنڈرے سردوکوف نے کہا کہ امن آپریشن اپنے اختتام کو پہنچ گیا ہے اور اس کے ذمے کام مکمل ہو گئےقازقستان میں پر تشدد احتجاج کے دوران روسی قیادت میں فوجیں تعینات کی گئی تھیں۔ قازقستان کے صدر قاسم جومارت نے کہا کہ روس اور اتحادی فوجوں نے ملک میں صورتحال کو مستحکم کرنے میں انتہائی اہم کرداد ادا کیا ہے۔الماتی میں سی ایس ٹی او کے مشن کی اختتامی تقریب منعقد ہوئی جس میں تمام چھ رکن ممالک کے قومی ترانے نشر کیے گئے اور سرکاری عہدیداروں کی جانب سےتقاریر کی گئیں۔سی ایس ٹو او کے کمانڈر آنڈرے سردوکوف کی قیادت میں روس، بیلاروس، آرمینیا، تاجکستان اور کرغستان سے آنے والی فوجیں 6 جنوری کو قازقستان میں تعینات کی گئی تھیں۔روسی وزارت دفاع نے تصدیق کی کہ امن فوج نے روسی ایرو سپیس فورسز کے ملٹری ایوی ایشن کے جہازوں میں اپنا ساز و سامان لوڈ کرنے کی تیاری شروع کر دی ہے اور مستقل تعیناتی کے مقام پر واپس لوٹ رہی ہیں۔