Wed Feb 21, 2024

اسرائیل کے فضائی حملے، خواتین و بچوں سمیت مزید 80 فلسطینی شہید برازیل نے اسرائیل سے اپنا سفیر واپس بلالیا حزب اللہ نے اسرائیل کے اندر تک سرنگیں بنا رکھی ہیں، فرانسیسی اخبار شہباز شریف وزیراعظم، زرداری صدر، حکومت سازی کا معاہدہ ہوگیا امریکا نے غزہ میں جنگ بندی کی تیسری قرارداد بھی ویٹو کردی سپاہ پاسداران انقلاب کے بری دستوں میں خودکش ڈرونز شامل اسرائیل فلسطینی قیدی خواتین کو بانجھ بنارہا ہے، اقوام متحدہ یمنی فوج کے دشمن کے جہازوں پر حملے، برطانوی جہاز ڈوب گیا خطے میں مزاحمت کی فکری بنیادیں واقعہ کربلا سے جنم لیتی ہیں، صیہونی اخبار یمن نے امریکا اور برطانیہ کو دشمن ملک قرار دے دیا طالبان نے دوحہ مذاکرات کیلئے ناقابل قبول شرائط رکھیں، گوتریس صیہونی فوج کے حملے جاری، مزید 107 فلسطینی شہید، 145 زخمی غزہ جنگ نے اسرائیلی معیشت تباہ کردی، آخری سہ ماہی میں 19.4 فیصد گراوٹ غزہ میں بھوک سے روزانہ درجنوں اموات ہو رہی ہیں، اقوام متحدہ ماہ رمضان میں مسجد اقصیٰ میں فلسطینیوں کا داخلہ محدود کرنے کا فیصلہ

روزانہ کی خبریں

  بیوی کے حقوق

ایک شادی شدہ کامیاب زندگی کے لیے کون سی چیزیں ضروری ہیں

شادی شدہ کامیاب زندگی کے لیے مندرجہ ذیل نکات کی طرف توجہ ضروری ہے۔

میاں بیوی کا رشتہ محبت پر استوار ہو*
ایک دوسرے کے شرعی حقوق کا خیال رکھتے ہو‌‌ۓ ایک دوسرے کی غلطیوں سے درگذر کرنا اور اس بات کی کوشش کرنا کہ زندگی کی بنیاد محبت پر ہو اور جو بیوی نکاح دائم میں ہے اس کے لیے حرام ہے کہ شوہر کی اجازت کے بغیر گھر سے باہر جائے مگر یہ کہ ضروری ہو یا گھر میں رہنا اس کے لیے موجب حرج و مشقت شدید ہو یا گھر اس کی شان کے مطابق نہ ہو اور اسے چاہیے کہ خود کو جنسی لذتوں کی لیے جو کہ شوہر کا حق ہے اس کے اختیار میں قرار دے اور کسی شرعی عذر کے بغیر ہمبستری کرنے سے اسے منع نہ کرے۔

نان و نفقہ کی فراہمی شوہر کی ذمہ داری ہے*
گھر، غذا، لباس اور ضروریات زندگی کا مہیا کرنا شوہر پر واجب ہے اور اگر وہ مہیا نہ کرے خواہ قدرت رکھتا ہو یا نہ رکھتا ہو اپنی بیوی کا مقروض ہے اور بیوی کے حقوق میں سے ہے کہ مرد اس کو آزار و اذیت نہ پہنچاۓ اور کسی شرعی وجہ کے بغیر اس سے سختی سے پیش نہ آۓ اور اگر بیوی اپنے ازدواجی وظائف پہ کچھ بھی عمل نہ کرے تو گھر،لباس اور غذا وغیرہ کے مطالبے کا حق نہیں رکھتی اگرچہ اس کے پاس رہے۔

بیوی گھر کے کام کرنے پر مجبور نہیں ہے.
مرد بیوی کو گھر کے کاموں پر مجبور نہیں کر سکتا۔ مستحب ہے کہ عورت گھر کے کام کو انجام دے۔ جس عورت کے اخراجات اس کے شوہر پر واجب ہیں اور وہ اس کا خرچ نہیں دیتا تو وہ شوہر کی اجازت کے بغیر اس کے مال سے اپنا خرچ لے سکتی ہے۔ البتہ شوہر کی شان کے مطابق ہو۔ اگر ممکن نہ ہو اور حاکم شرع سے رجوع کر کے وصول بھی نہ کر سکتی ہو تو کام کر کے اپنی ضروریات کو پورا کر سکتی ہے اور جس وقت اپنی ضروریات کو مہیا کرنے میں مصروف ہے شوہر کی اطاعت واجب نہیں ہے۔

مزید پڑھیے

Most Popular