پاکستان کا جی ایس پی پلس کا درجہ برقرار، نئی شرائط عائد

  Click to listen highlighted text! اسلام آباد: یورپی یونین نے پاکستان کا جی ایس پی پلس کا درجہ برقرار رکھا ہے جب کہ یورپی کمیشن کے مطابق یورپی یونین اور پاکستان جوائنٹ کمیشن میں مشاورت جاری ہے، یورپی کمیشن کا کہنا ہے کہ جی ایس پی پلس کی نئی شرائط پر بات ہوئی ہے اور نئی شرائط میں 6 نئے کنونشن شامل کیے گیے ہیں۔یورپی کمیشن کے مطابق نئے کنونشن میں معذور افراد کے حقوق، چائلڈ لیبر کا خاتمہ اور ماحولیات کا تحفظ شامل ہے، 2024 تک ملنے والی یہ توسیع پاکستان کو ریلیف فراہم کرے گی کیونکہ یورپی ممالک کی جانب سے مختلف ڈیوٹیوں اور ٹیکسوں میں کمی سے پاکستان نے 2014 ء سے اب تک ایک ارب سے 1.5 ارب یورو کی اضافی برآمدات کیں، پاکستان کو 2014 میں جی ایس پی پلس درجہ دیا گیا اور اس نے اقوام متحدہ کے 27 کنونشنز کی ذمے داریوں کو پورا کرنے کا عزم ظاہر کیا تھا، یورپی یونین پاکستان کی پہلی برآمدی ترجیح ہے، 2018 میں پاکستان کی کل برآمدات کا ایک تہائی (34 فیصد) حصہ یورپی یونین کو برآمد کیا گیا،اس کے بعد امریکا کا نمبر آتا ہے۔

اسلام آباد: یورپی یونین نے پاکستان کا جی ایس پی پلس کا درجہ برقرار رکھا ہے جب کہ یورپی کمیشن کے مطابق یورپی یونین اور پاکستان جوائنٹ کمیشن میں مشاورت جاری ہے، یورپی کمیشن کا کہنا ہے کہ جی ایس پی پلس کی نئی شرائط پر بات ہوئی ہے اور نئی شرائط میں 6 نئے کنونشن شامل کیے گیے ہیں۔یورپی کمیشن کے مطابق نئے کنونشن میں معذور افراد کے حقوق، چائلڈ لیبر کا خاتمہ اور ماحولیات کا تحفظ شامل ہے، 2024 تک ملنے والی یہ توسیع پاکستان کو ریلیف فراہم کرے گی کیونکہ یورپی ممالک کی جانب سے مختلف ڈیوٹیوں اور ٹیکسوں میں کمی سے پاکستان نے 2014 ء سے اب تک ایک ارب سے 1.5 ارب یورو کی اضافی برآمدات کیں، پاکستان کو 2014 میں جی ایس پی پلس درجہ دیا گیا اور اس نے اقوام متحدہ کے 27 کنونشنز کی ذمے داریوں کو پورا کرنے کا عزم ظاہر کیا تھا، یورپی یونین پاکستان کی پہلی برآمدی ترجیح ہے، 2018 میں پاکستان کی کل برآمدات کا ایک تہائی (34 فیصد) حصہ یورپی یونین کو برآمد کیا گیا،اس کے بعد امریکا کا نمبر آتا ہے۔