دہشتگردوں سے مذاکرات کا خاطر خواہ نتیجہ نہیں نکلے گا، پشتون قومی امن جرگہ

پشاور: پختون قومی امن جرگے نے دہشت گردوں سے مذاکرات کو بے سود قرار دے دیا۔ اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان اور جرگے کے دیگر شرکا نے نیوز بریفنگ میں کہا کہ ریاست کی پالیسی میں بنیادی تبدیلیوں کے بغیر دہشت گردوں کےساتھ مذاکرات کا کوئی خاطر خواہ نتیجہ نہیں آسکتا۔اگر کوئی مذاکراتی عمل ہوتا بھی ہے تو صرف اور صرف پارلیمان کی سربراہی اور آئین کے فریم ورک میں قابل قبول ہوگا پشتونوں کی سیاسی قیادت اور دہشت گردی سے متاثرہ خاندانوں کی رائے کے بغیر ہمیں کوئی مذاکرات قابل قبول نہیں ہوں گے۔ریاست کے جو ادارے طالبان کے لئے گنجائش دیکھتے ہیں وہ عمرانی معاہدے کی خلاف ورزی کررہے ہے، ٹارگٹ کلنگ کے واقعات بڑھ گئے ہیں، قاتلوں کو ہمیشہ نامعلوم کے پردے میں بچایا جاتا ہے ٹارگٹ کلنگ کی ذمہ دار ی ریاست پر ڈالتے ہیں صوبے میں بھتہ خوری کا سلسلہ بھی جاری ہے وزیراعلیٰ، سابق گورنر، اسپیکر اور وزراء تک بھتہ دے چکے ہیں۔

  Click to listen highlighted text! پشاور: پختون قومی امن جرگے نے دہشت گردوں سے مذاکرات کو بے سود قرار دے دیا۔ اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان اور جرگے کے دیگر شرکا نے نیوز بریفنگ میں کہا کہ ریاست کی پالیسی میں بنیادی تبدیلیوں کے بغیر دہشت گردوں کےساتھ مذاکرات کا کوئی خاطر خواہ نتیجہ نہیں آسکتا۔اگر کوئی مذاکراتی عمل ہوتا بھی ہے تو صرف اور صرف پارلیمان کی سربراہی اور آئین کے فریم ورک میں قابل قبول ہوگا پشتونوں کی سیاسی قیادت اور دہشت گردی سے متاثرہ خاندانوں کی رائے کے بغیر ہمیں کوئی مذاکرات قابل قبول نہیں ہوں گے۔ریاست کے جو ادارے طالبان کے لئے گنجائش دیکھتے ہیں وہ عمرانی معاہدے کی خلاف ورزی کررہے ہے، ٹارگٹ کلنگ کے واقعات بڑھ گئے ہیں، قاتلوں کو ہمیشہ نامعلوم کے پردے میں بچایا جاتا ہے ٹارگٹ کلنگ کی ذمہ دار ی ریاست پر ڈالتے ہیں صوبے میں بھتہ خوری کا سلسلہ بھی جاری ہے وزیراعلیٰ، سابق گورنر، اسپیکر اور وزراء تک بھتہ دے چکے ہیں۔