گرمی کی چھٹیوں میں ٹین ایج کو کیسے ایکٹو رکھنا ھے کہ موبائل سے دور رہیں اپنا اسکول کا کام بھی ڈیلی روٹین میں رکھیں اور اچھا وقت، گزاریں ….

  Click to listen highlighted text! جواب 👇 ✍️ ٹائم ٹیبل بنائیں ✍️ ایکسرسائز ، واک، جم، سوئمنگ وغیرہ کو باقاعدگی سے کریں ✍️بچے پر ذمہ داری ڈالیں جیسے شام کی چائے، پودوں کو پانی، گھر کی صفائی، کپڑے استری کرنا ، چیزیں سمیٹ کر رکھنا کوئی بھی کام جو آپ دینا چاہے وہ ان کی responsiblity میں شامل کر دیں کے انہوں نے کرنے ہی کرنے ہیں۔ ✍️کتب بینی کی عادت ڈالیں بلکہ کتاب خود بھی پڑھیں اور پھر بچوں کے ساتھ اس کو ڈسکس کریں کے کیا پڑھا، کیا سیکھا ، کیا سبق ملا. ✍️کریٹو رائٹنگ creative writing سکھائیں اس کی مدد سے بچے معاملہ فہمی بھی سیکھ سکیں گے۔ کوئی بھی ٹاپک دیجیے اور اس پر لکھنا کا کہیں. ✍️پرابلم سولونگ problem solving سکھائیں۔ کوئی بھی مسئلہassume کیجئے انہیں وہ سچویشن دیجئے اور پوچھیں کے اس صورتحال کو کیسے ہینڈل کیا جاسکتا ہے یا اگر انہیں کبھی اس سچویشن کا سامنا کرنا پڑے تو وہ کیسے ہینڈل کریں گے اور پھر بہتر طریقہ بتائیں۔ ✍️زیادہ فوکس سکل ڈویلپمنٹ پر کریں کمیونیکیشن سکلز لازمی سکھائیں اور ان کو سکھانے کے لئے بچے کو مختلف ٹاپکس ، مختلف پرابلمز ، مختلف سچویشنز پر بولنے کا کہیں اور ان کی حوصلہ افزائی کریں۔۔۔ ✍️اس کے علاوہ جو بھی سکل آپکے بچے میں یے اسکو پالش کرنے میں اس کی مدد کریں پینٹنگ ، رائیٹنگ ، سکیچنگ ، کوکنگ، ڈیزائینگ ، گارڈننگ وغیرہ ✍️آنلائن فریلانسنگ کورسز سکھائیں۔ ✍️ٹین ایج بچے کو مذہب کی طرف راغب کرنے،اس کی تعلیم دینے کی بہترین عمر ہے اس لیے قرآن پاک کے ترجمہ تفسیر وغیرہ بھی پڑھائیں اور ان پر healthy discussion بھی کریں۔۔ ✍️اس عمر میں بچوں میں بہت سی جسمانی اور جذباتی تبدیلیاں رونما ہو رہی ہوتی ہیں ان کے پیش نظر اپنے بچے کو اپنے سے بہت قریب رکھیں تاکہ وہ ہمیشہ مشکل اور پریشانی میں آپ کے پاس ہی ائے۔ بچے کو اعتماد دیجئے کے وہ اپنی ہر بات ہر مسئلہ کھل کر آپ سے ڈسکس اور شئیر کر سکتا ہے اور یہ اعتماد دینے کے لیے ضروری ہے کے آپ خود بچے کے ساتھ اپنی چھوٹی چھوٹی پرابلمز ڈسکس کیجئے اور ان سے مشورہ لیجئے۔۔ ✍️بچوں کو appreciate کیجئے طنز و تنقید کم سے کم کریں اور healthy discussions کو معمول کا حصہ بنائیں۔ تحریر: مریم امین اعوان

جواب 👇

✍️ ٹائم ٹیبل بنائیں

✍️ ایکسرسائز ، واک، جم، سوئمنگ وغیرہ کو باقاعدگی سے کریں

✍️بچے پر ذمہ داری ڈالیں جیسے شام کی چائے، پودوں کو پانی، گھر کی صفائی، کپڑے استری کرنا ، چیزیں سمیٹ کر رکھنا کوئی بھی کام جو آپ دینا چاہے وہ ان کی responsiblity میں شامل کر دیں کے انہوں نے کرنے ہی کرنے ہیں۔

✍️کتب بینی کی عادت ڈالیں بلکہ کتاب خود بھی پڑھیں اور پھر بچوں کے ساتھ اس کو ڈسکس کریں کے کیا پڑھا، کیا سیکھا ، کیا سبق ملا.

✍️کریٹو رائٹنگ creative writing سکھائیں اس کی مدد سے بچے معاملہ فہمی بھی سیکھ سکیں گے۔ کوئی بھی ٹاپک دیجیے اور اس پر لکھنا کا کہیں.

✍️پرابلم سولونگ problem solving سکھائیں۔ کوئی بھی مسئلہassume کیجئے انہیں وہ سچویشن دیجئے اور پوچھیں کے اس صورتحال کو کیسے ہینڈل کیا جاسکتا ہے یا اگر انہیں کبھی اس سچویشن کا سامنا کرنا پڑے تو وہ کیسے ہینڈل کریں گے اور پھر بہتر طریقہ بتائیں۔

✍️زیادہ فوکس سکل ڈویلپمنٹ پر کریں کمیونیکیشن سکلز لازمی سکھائیں اور ان کو سکھانے کے لئے بچے کو مختلف ٹاپکس ، مختلف پرابلمز ، مختلف سچویشنز پر بولنے کا کہیں اور ان کی حوصلہ افزائی کریں۔۔۔

✍️اس کے علاوہ جو بھی سکل آپکے بچے میں یے اسکو پالش کرنے میں اس کی مدد کریں
پینٹنگ ، رائیٹنگ ، سکیچنگ ، کوکنگ، ڈیزائینگ ، گارڈننگ وغیرہ

✍️آنلائن فریلانسنگ کورسز سکھائیں۔

✍️ٹین ایج بچے کو مذہب کی طرف راغب کرنے،اس کی تعلیم دینے کی بہترین عمر ہے اس لیے قرآن پاک کے ترجمہ تفسیر وغیرہ بھی پڑھائیں اور ان پر healthy discussion بھی کریں۔۔

✍️اس عمر میں بچوں میں بہت سی جسمانی اور جذباتی تبدیلیاں رونما ہو رہی ہوتی ہیں ان کے پیش نظر اپنے بچے کو اپنے سے بہت قریب رکھیں تاکہ وہ ہمیشہ مشکل اور پریشانی میں آپ کے پاس ہی ائے۔ بچے کو اعتماد دیجئے کے وہ اپنی ہر بات ہر مسئلہ کھل کر آپ سے ڈسکس اور شئیر کر سکتا ہے اور یہ اعتماد دینے کے لیے ضروری ہے کے آپ خود بچے کے ساتھ اپنی چھوٹی چھوٹی پرابلمز ڈسکس کیجئے اور ان سے مشورہ لیجئے۔۔

✍️بچوں کو appreciate کیجئے طنز و تنقید کم سے کم کریں اور healthy discussions کو معمول کا حصہ بنائیں۔

تحریر: مریم امین اعوان