Wed Feb 21, 2024

اسرائیل کے فضائی حملے، خواتین و بچوں سمیت مزید 80 فلسطینی شہید برازیل نے اسرائیل سے اپنا سفیر واپس بلالیا حزب اللہ نے اسرائیل کے اندر تک سرنگیں بنا رکھی ہیں، فرانسیسی اخبار شہباز شریف وزیراعظم، زرداری صدر، حکومت سازی کا معاہدہ ہوگیا امریکا نے غزہ میں جنگ بندی کی تیسری قرارداد بھی ویٹو کردی سپاہ پاسداران انقلاب کے بری دستوں میں خودکش ڈرونز شامل اسرائیل فلسطینی قیدی خواتین کو بانجھ بنارہا ہے، اقوام متحدہ یمنی فوج کے دشمن کے جہازوں پر حملے، برطانوی جہاز ڈوب گیا خطے میں مزاحمت کی فکری بنیادیں واقعہ کربلا سے جنم لیتی ہیں، صیہونی اخبار یمن نے امریکا اور برطانیہ کو دشمن ملک قرار دے دیا طالبان نے دوحہ مذاکرات کیلئے ناقابل قبول شرائط رکھیں، گوتریس صیہونی فوج کے حملے جاری، مزید 107 فلسطینی شہید، 145 زخمی غزہ جنگ نے اسرائیلی معیشت تباہ کردی، آخری سہ ماہی میں 19.4 فیصد گراوٹ غزہ میں بھوک سے روزانہ درجنوں اموات ہو رہی ہیں، اقوام متحدہ ماہ رمضان میں مسجد اقصیٰ میں فلسطینیوں کا داخلہ محدود کرنے کا فیصلہ

روزانہ کی خبریں

انتخابی نتائج کی تیاری اور اعلان میں تاخیر نے منظم الیکشن کو گہنا دیا، فافن

اسلام آباد: انتخابی نتائج کی تیاری اور اعلان نے منظم الیکشن کو گہنا دیا۔ مبصرین کو نصف آر او دفاتر میں نتائج تیاری میں رسائی نہیں دی گئی۔ نامکمل معلومات پر نتائج اخذ کیے گئے۔ شفافیت پولنگ اسٹیشن پر قائم رہی لیکن آر او کے دفتر پر شفافیت پر سمجھوتا ہوا ۔ فری اینڈ فیئر الیکشن نیٹ ورک نے الیکشن پر ابتدائی مشاہدہ رپورٹ جاری کر دی۔
رپورٹ کے مطابق یکساں مواقع نہ ملنے اور دہشت گردی کے خطرات کے باوجود سیاسی جماعتوں نے الیکشن میں حصہ لیا۔ پانچ کروڑ سے زائد افراد نے ووٹ ڈالا۔ ٹرن آؤٹ اڑتالیس فیصد رہا۔ الیکشن کمیشن نے انتخابی مشق کو منعقد کیا جو قابل ستائش ہے۔ لیکن نتائج کی تیاری اور اعلان میں تاخیر نے نتیجہ کی ساکھ پر سوالات اٹھا دیے۔ رپورٹ کے مطابق مبصرین کو نصف آر او دفاتر میں رسائی نہیں دی گئی۔ پچیس حلقوں میں مسترد ووٹوں کا مارجن جیت کے مارجن سے زیادہ تھا۔ اس بار بھی سولہ لاکھ بیلٹ پیپرز مسترد ہوئے۔ 29 فیصد پولنگ اسٹیشن کے باہر فارم 45 آویزاں نہیں کیے گئے ۔ 130حلقوں میں آر اوز نے مبصرین کو مشاہدہ نہیں کرنے دیا۔ شفافیت پولنگ اسٹیشن پر قائم رہی لیکن آر او کے دفتر پر شفافیت پر سمجھوتا ہوا۔ فافن کے مطابق زیادہ تر سیاسی جماعتیں اپنا ووٹ بینک برقرار رکھنے میں کامیاب رہیں۔ انتخابات سے ملک میں بے یقینی کا دور ختم ہو گیا ہے۔ سیاسی جماعتوں کی ذمے داری ہے کہ ملک میں استحکام کو یقینی بنائیں۔ امیدواروں کے نتائج پر تحفظات الیکشن کمیشن کو جلد حل کرنے کی ضرورت ہے۔

مزید پڑھیے

Most Popular